اپنے بارے میں جب بھی سوچا ہے

جمیل نظر

اپنے بارے میں جب بھی سوچا ہے

جمیل نظر

MORE BY جمیل نظر

    اپنے بارے میں جب بھی سوچا ہے

    اس کا چہرہ نظر میں ابھرا ہے

    تجربوں نے یہی بتایا ہے

    آدمی شہرتوں کا بھوکا ہے

    دیکھیے تو ہے کارواں ورنہ

    ہر مسافر سفر میں تنہا ہے

    اس کے بارے میں سوچنے والو

    دیکھ لو اب یہ حال اپنا ہے

    کون بندش لگائے خوشبو کی

    عشق فطرت کا اک تقاضا ہے

    یاد آئی ہے جانے کس کس کی

    لب پہ جب ذکر اس کا آیا ہے

    فکر کی تلخیوں میں گم ہو کر

    آدمی بے سبب بھی ہنستا ہے

    آرزو مند کوئی ہو تو کہوں

    میرے دل میں بھی اک تمنا ہے

    میرے چہرے پہ جو لکھا ہے نظرؔ

    غور سے کس نے اس کی سمجھا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites