اپنی مٹی کو سرافراز نہیں کر سکتے

رئیس فروغ

اپنی مٹی کو سرافراز نہیں کر سکتے

رئیس فروغ

MORE BYرئیس فروغ

    اپنی مٹی کو سرافراز نہیں کر سکتے

    یہ در و بام تو پرواز نہیں کر سکتے

    عالم خواہش و ترغیب میں رہتے ہیں مگر

    تیری چاہت کو سبو تاژ نہیں کر سکتے

    حسن کو حسن بنانے میں مرا ہاتھ بھی ہے

    آپ مجھ کو نظر انداز نہیں کر سکتے

    شہر میں ایک ذرا سے کسی گھر کی خاطر

    اپنے صحراؤں کو ناراض نہیں کر سکتے

    عشق وہ کار مسلسل ہے کہ ہم اپنے لیے

    ایک لمحہ بھی پس انداز نہیں کر سکتے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY