بادباں کھولے گی اور بند قبا لے جائے گی

آشفتہ چنگیزی

بادباں کھولے گی اور بند قبا لے جائے گی

آشفتہ چنگیزی

MORE BYآشفتہ چنگیزی

    بادباں کھولے گی اور بند قبا لے جائے گی

    رات پھر آئے گی پھر سب کچھ بہا لے جائے گی

    خواب جتنے دیکھنے ہیں آج سارے دیکھ لیں

    کیا بھروسہ کل کہاں پاگل ہوا لے جائے گی

    یہ اندھیرے ہیں غنیمت کوئی رستہ ڈھونڈ لو

    صبح کی پہلی کرن آنکھیں اٹھا لے جائے گی

    ہوش مندوں سے بھرے ہیں شہر اور جنگل سبھی

    ساتھ کس کس کو بھلا کالی گھٹا لے جائے گی

    جاگتے منظر چھتیں دالان آنگن کھڑکیاں

    اب کے پھیرے میں ہوا یہ بھی اڑا لے جائے گی

    ایک اک کر کے سبھی ساتھی پرانے کھو گئے

    جو بچا ہے وہ نگاہ سرمہ سا لے جائے گی

    جاتے جاتے دیکھ لینا گردش لیل و نہار

    زندگی سے بانکپن لطف خطا لے جائے گی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY