بہار آئی جنوں لے گا ہمارا امتحاں دیکھیں

ولی عزلت

بہار آئی جنوں لے گا ہمارا امتحاں دیکھیں

ولی عزلت

MORE BYولی عزلت

    بہار آئی جنوں لے گا ہمارا امتحاں دیکھیں

    نمک دے گا دل زخمی کو شور بلبلاں دیکھیں

    سیا ہے زخم بلبل گل نے خار اور بوئے گلشن سے

    سوئی تاگا ہمارے چاک دل کا ہے کہاں دیکھیں

    ہمیں دل سوزی ہمیشہ یہاں تک دین و ایماں ہے

    کہ جی جلتا ہے جب ہم بلبل فصل خزاں دیکھیں

    گزر جاتی ہے دل سے تیر ہو کر یاد اس قد کی

    جہاں ہم دوش عاشق ہم کوئی ابرو کماں دیکھیں

    ہما سے بچ کے مجھ مجنوں کو دولت عشق کی ہو جو

    سگ لیلیٰ کی قسمت ہوں گے میرے استخواں دیکھیں

    چلا ہوں عزلتؔ اب صحرا بگولے کی زیارت کو

    ملے گا طوف کو مجنوں کا برباد آستاں دیکھیں

    مأخذ :
    • Deewan-e-uzlat(Rekhta Website)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY