چاہیئے عشق میں اس طرح فنا ہو جانا

احسن مارہروی

چاہیئے عشق میں اس طرح فنا ہو جانا

احسن مارہروی

MORE BYاحسن مارہروی

    چاہیئے عشق میں اس طرح فنا ہو جانا

    جس طرح آنکھ اٹھے محو ادا ہو جانا

    کسی معشوق کا عاشق سے خفا ہو جانا

    روح کا جسم سے گویا ہے جدا ہو جانا

    موت ہی آپ کے بیمار کی قسمت میں نہ تھی

    ورنہ کب زہر کا ممکن تھا دوا ہو جانا

    اپنے پہلو میں تجھے دیکھ کے حیرت ہے مجھے

    خرق عادت ہے ترا وعدہ وفا ہو جانا

    وقعت عشق کہاں جب یہ تلون ہو وہاں

    کبھی راضی کبھی عاشق سے خفا ہو جانا

    جب ملاقات ہوئی تم سے تو تکرار ہوئی

    ایسے ملنے سے تو بہتر ہے جدا ہو جانا

    چھیڑ کچھ ہو کہ نہ ہو بات ہوئی ہو کہ نہ ہو

    بیٹھے بیٹھے انہیں آتا ہے خفا ہو جانا

    مجھ سے پھر جائے جو دنیا تو بلا سے پھر جائے

    تو نہ اے آہ زمانے کی ہوا ہو جانا

    احسنؔ اچھا ہے رہے مال عرب پیش عرب

    دے کے دل تم نہ گرفتار بلا ہو جانا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    چاہیئے عشق میں اس طرح فنا ہو جانا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY