چاند کو ریشمی بادل سے الجھتا دیکھوں

بمل کرشن اشک

چاند کو ریشمی بادل سے الجھتا دیکھوں

بمل کرشن اشک

MORE BYبمل کرشن اشک

    چاند کو ریشمی بادل سے الجھتا دیکھوں

    وہ ہوا ہے کبھی آنچل کبھی چہرہ دیکھوں

    دیکھنے نکلا ہوں دنیا کو مگر کیا دیکھوں

    جس طرف آنکھ اٹھاؤں وہی چہرہ دیکھوں

    دائرہ کھینچ کے بیٹھا ہوں بڑی مدت سے

    خود سے نکلوں تو کسی اور کا رستہ دیکھوں

    یہ وہ دروازہ ہے کھولوں تو کوئی آ نہ سکے

    اور اگر بند کروں دل ہی میں دنیا دیکھوں

    وہ عجب چیز ہے اس کا کوئی چہرہ ہی نہیں

    ایک پردہ جو اٹھے دوسرا پردہ دیکھوں

    وہ چکا چوند ہے نکلے گا نہ گھر سے کوئی

    دھوپ اگر چھٹکے وہ ہنستا ہوا چہرہ دیکھوں

    میرا سایہ ہو کہ میں کوئی تو دھوکا ہے ضرور

    گھر میں آئینہ کہ گھر سے پرے دریا دیکھوں

    کوئی پھل پھول نہیں مغربی چٹانوں پر

    چاند جس گاؤں سے اگتا ہے وہ دنیا دیکھوں

    مأخذ :
    • کتاب : Aazadi Ke Baad Urdu Gazal (Pg. 323)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY