دھوپ میں غم کی مرے ساتھ جو آیا ہوگا

ساغرؔ اعظمی

دھوپ میں غم کی مرے ساتھ جو آیا ہوگا

ساغرؔ اعظمی

MORE BY ساغرؔ اعظمی

    دھوپ میں غم کی مرے ساتھ جو آیا ہوگا

    وہ کوئی اور نہیں میرا ہی سایا ہوگا

    یہ جو دیوار پہ کچھ نقش ہیں دھندلے دھندلے

    اس نے لکھ لکھ کے مرا نام مٹایا ہوگا

    جن کے ہونٹوں پہ تبسم ہے مگر آنکھ ہے نم

    اس نے غم اپنا زمانے سے چھپایا ہوگا

    بے تعلق سی فضا ہوگی رہ غربت میں

    کوئی اپنا ہی ملے گا نہ پرایا ہوگا

    اتنا ناراض ہو کیوں اس نے جو پتھر پھینکا

    اس کے ہاتھوں سے کبھی پھول بھی آیا ہوگا

    میری ہی طرح مرے شعر ہیں رسوا ساغرؔ

    کس کو اس طرح محبت نے سنایا ہوگا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY