دن کو کار دراز دہر رہا (ردیف .. ی)

محمود ایاز

دن کو کار دراز دہر رہا (ردیف .. ی)

محمود ایاز

MORE BY محمود ایاز

    دن کو کار دراز دہر رہا

    رات خوابوں کی وادیوں میں کٹی

    چاند خاموش جا رہا تھا کہیں

    ہم نے بھی اس سے کوئی بات نہ کی

    ساعت دید تیری عمر ہی کیا

    ابھی آئی نہ تھی کہ بیت گئی

    برگ آوارہ سے کوئی پوچھے

    بوئے گل کس کی جستجو میں گئی

    کس کا نغمہ ہے دل کی دھڑکن میں

    کس کی آواز پا سکوت بنی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY