ڈوبا ہوا اٹھوں دم محشر شراب میں

مرزا مائل دہلوی

ڈوبا ہوا اٹھوں دم محشر شراب میں

مرزا مائل دہلوی

MORE BYمرزا مائل دہلوی

    ڈوبا ہوا اٹھوں دم محشر شراب میں

    دے دیں کفن جو یار ڈبو کر شراب میں

    مانے نہ مانے کوئی پہ اتنا کہیں گے ہم

    ہے ذوق بے خودی تو مقرر شراب میں

    مانیں جو میری بات مریدان بے ریا

    دیں شیخ کو کفن تو ڈبو کر شراب میں

    کس کے خرام ناز سے ملتی ہے موج جام

    برپا ہے ایک فتنۂ محشر شراب میں

    وہ رند بادہ کش ہوں کہ مائلؔ پس فنا

    جلوے نے ترے قہر اٹھایا نقاب میں

    مأخذ :
    • کتاب : Intekhab-e-Sukhan(Jild-2) (Pg. 235)
    • Author : Hasrat Mohani
    • مطبع : uttar pradesh urdu academy (1983)
    • اشاعت : 1983

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY