ایک کے گھر کی خدمت کی اور ایک کے دل سے محبت کی

زہرا نگاہ

ایک کے گھر کی خدمت کی اور ایک کے دل سے محبت کی

زہرا نگاہ

MORE BY زہرا نگاہ

    ایک کے گھر کی خدمت کی اور ایک کے دل سے محبت کی

    دونوں فرض نبھا کر اس نے ساری عمر عبادت کی

    دست طلب کچھ اور بڑھاتے ہفت اقلیم بھی مل جاتے

    ہم نے تو کچھ ٹوٹے پھوٹے جملوں ہی پہ قناعت کی

    شہرت کے گہرے دریا میں ڈوبے تو پھر ابھرے نہیں

    جن لوگوں کو اپنا سمجھا جن لوگوں سے محبت کی

    ایک دوراہا ایسا آیا دونوں ٹوٹ کے گر جاتے

    بچوں کے ہاتھوں نے سنبھالا بوڑھوں ہی نے حفاظت کی

    جامۂ الفت بنتے آئے رشتوں کے دھاگوں سے ہم

    عمر کی قینچی کاٹ گئی اب کاہے کو اتنی محنت کی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY