غم کے بھروسے کیا کچھ چھوڑا کیا اب تم سے بیان کریں

میراجی

غم کے بھروسے کیا کچھ چھوڑا کیا اب تم سے بیان کریں

میراجی

MORE BY میراجی

    غم کے بھروسے کیا کچھ چھوڑا کیا اب تم سے بیان کریں

    غم بھی راس نہ آیا دل کو اور ہی کچھ سامان کریں

    کرنے اور کہنے کی باتیں کس نے کہیں اور کس نے کیں

    کرتے کہتے دیکھیں کسی کو ہم بھی کوئی پیمان کریں

    بھلی بری جیسی بھی گزری ان کے سہارے گزری ہے

    حضرت دل جب ہاتھ بڑھائیں ہر مشکل آسان کریں

    ایک ٹھکانا آگے آگے پیچھے ایک مسافر ہے

    چلتے چلتے سانس جو ٹوٹے منزل کا اعلان کریں

    میرؔ ملے تھے میراجیؔ سے باتوں سے ہم جان گئے

    فیض کا چشمہ جاری ہے حفظ ان کا بھی دیوان کریں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY