غم نیرنگ دکھاتا ہے ہستی کی جلوہ نمائی کا

کوثر جائسی

غم نیرنگ دکھاتا ہے ہستی کی جلوہ نمائی کا

کوثر جائسی

MORE BYکوثر جائسی

    غم نیرنگ دکھاتا ہے ہستی کی جلوہ نمائی کا

    کتنے زمانوں کا حاصل ہے اک لمحہ تنہائی کا

    تیرے نازک لب ہیں گویا موسم کا موضوع سخن

    گلشن گلشن شہرہ ہے شادابی کا رعنائی کا

    اپنے غم کی فکر نہ کی اس دنیا کی غم خواری میں

    برسوں ہم نے دست جنوں سے کام لیا دانائی کا

    عالم کے ہر منظر کو کچھ رنگ نئے مل جاتے ہیں

    کرنیں صبح کی لے جاتی ہیں روپ تری انگڑائی کا

    ساحل و طوفاں کے افسانے رنگ حقیقت کیا دیں گے

    ڈوب کے ابھرو تو عرفاں ہو دریا کی گہرائی کا

    دل میں کوثرؔ آئے کتنے دور تغیر کے لیکن

    نقش تمنا پر جب دیکھو عالم ہے برنائی کا

    مأخذ :
    • کتاب : Mujalla Dastavez (Pg. 224)
    • Author : Aziz Nabeel
    • مطبع : Edarah Dastavez (2010)
    • اشاعت : 2010

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY