ہے تنہائی میں بہنا آنسوؤں کا

حسن اکبر کمال

ہے تنہائی میں بہنا آنسوؤں کا

حسن اکبر کمال

MORE BYحسن اکبر کمال

    ہے تنہائی میں بہنا آنسوؤں کا

    سبب چہروں کی ان شادابیوں کا

    بظاہر میں بھی خوش اور تو بھی مسرور

    مگر دیکھے کوئی عالم دلوں کا

    وفا پرچھائیں کی اندھی پرستش

    محبت نام ہے محرومیوں کا

    ہے اپنی زندگی جتنا پرانا

    تعلق آنکھ سے ویرانیوں کا

    ہر اک چہرے پہ ہے تحریر غم کی

    ضروری تو نہیں کھلنا لبوں کا

    یہ میں ہوں یا کوئی معصوم بچہ

    تعاقب کر رہا ہے تتلیوں کا

    کمالؔ اب خود بھٹکتا پھر رہا ہے

    تمنائی تھا اڑتی خوشبوؤں کا

    مأخذ :
    • کتاب : khizaa.n mera mausam (Pg. 95)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY