ہم سوچتے ہیں رات میں تاروں کو دیکھ کر (ردیف .. ن)

چکبست برج نرائن

ہم سوچتے ہیں رات میں تاروں کو دیکھ کر (ردیف .. ن)

چکبست برج نرائن

MORE BYچکبست برج نرائن

    ہم سوچتے ہیں رات میں تاروں کو دیکھ کر

    شمعیں زمین کی ہیں جو داغ آسماں کے ہیں

    جنت میں خاک بادہ پرستوں کا دل لگے

    نقشے نظر میں صحبت پیر مغاں کے ہیں

    اپنا مقام شاخ بریدہ ہے باغ میں

    گل ہیں مگر ستائے ہوئے باغباں کے ہیں

    اک سلسلہ ہوس کا ہے انساں کی زندگی

    اس ایک مشت خاک کو غم دو جہاں کے ہیں

    مآخذ :
    • کتاب : Jadeed Shora-e-Urdu (Pg. 189)
    • Author : Dr. Abdul Wahid
    • مطبع : Feroz sons Printers Publishers and Stationers

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY