ہر گھڑی برسے ہے بادل مجھ میں

مرزا اطہر ضیا

ہر گھڑی برسے ہے بادل مجھ میں

مرزا اطہر ضیا

MORE BYمرزا اطہر ضیا

    ہر گھڑی برسے ہے بادل مجھ میں

    کون ہے پیاس سے پاگل مجھ میں

    تم نے رو دھو کے تسلی کر لی

    پھیلتا ہے ابھی کاجل مجھ میں

    میں ادھورا سا ہوں اس کے اندر

    اور وہ شخص مکمل مجھ میں

    چپ کی دیواروں سے سر پھوڑے ہے

    جو اک آواز ہے پاگل مجھ میں

    میں تجھے سہل بہت لگتا ہوں

    تو کبھی چار قدم چل مجھ میں

    مژدہ آنکھوں کو کہ پھر سے پھوٹی

    اک نئے خواب کی کونپل مجھ میں

    کاٹنے ہیں کئی بن باس یہیں

    اگ رہا ہے جو یہ جنگل مجھ میں

    آگ میں جلتا ہوں جب جب اطہرؔ

    اور آ جاتا ہے کچھ بل مجھ میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY