ان کالی سڑکوں پہ اکثر دھیان آیا

عبد الرحیم نشتر

ان کالی سڑکوں پہ اکثر دھیان آیا

عبد الرحیم نشتر

MORE BY عبد الرحیم نشتر

    ان کالی سڑکوں پہ اکثر دھیان آیا

    میرے من کا میل کہاں تک پھیل گیا

    دیکھ رہا تھا جاتے جاتے حسرت سے

    سوچ رہا ہوگا میں اس کو روکوں گا

    اس نے چلتے چلتے لفظوں کا زہراب

    میرے جذبوں کی پیالی میں ڈال دیا

    اس گھر کی دیواریں مجھ سے روٹھ گئیں

    جس کے اندر کا ہر سایہ میرا تھا

    پان کے ٹھیلے ہوٹل لوگوں کا جمگھٹ

    اپنے تنہا ہونے کا احساس بھی کیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY