عشق کی سعی بد انجام سے ڈر بھی نہ سکے

ابو محمد سحر

عشق کی سعی بد انجام سے ڈر بھی نہ سکے

ابو محمد سحر

MORE BY ابو محمد سحر

    عشق کی سعی بد انجام سے ڈر بھی نہ سکے

    ہم تری چشم عنایت سے اتر بھی نہ سکے

    تو نہ ملتا مگر اللہ رے محرومی شوق

    جینے والے تری امید میں مر بھی نہ سکے

    برق سے کھیلنے طوفان پہ ہنسنے والے

    ایسے ڈوبے ترے غم میں کہ ابھر بھی نہ سکے

    حسن خود حسن مجسم سے پشیماں اٹھا

    آئینہ لے کے وہ بیٹھے تو سنور بھی نہ سکے

    تشنہ لب بیٹھے ہیں مے خانۂ ہستی میں سحرؔ

    دل وہ ٹوٹا ہوا پیمانہ کہ بھر بھی نہ سکے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY