جانے اس نے کیا دیکھا شہر کے منارے میں

ثروت حسین

جانے اس نے کیا دیکھا شہر کے منارے میں

ثروت حسین

MORE BY ثروت حسین

    جانے اس نے کیا دیکھا شہر کے منارے میں

    پھر سے ہو گیا شامل زندگی کے دھارے میں

    اسم بھول بیٹھے ہم جسم بھول بیٹھے ہم

    وہ ہمیں ملی یارو رات اک ستارے میں

    اپنے اپنے گھر جا کر سکھ کی نیند سو جائیں

    تو نہیں خسارے میں میں نہیں خسارے میں

    میں نے دس برس پہلے جس کا نام رکھا تھا

    کام کر رہی ہوگی جانے کس ادارے میں

    موت کے درندے میں اک کشش تو ہے ثروتؔ

    لوگ کچھ بھی کہتے ہوں خودکشی کے بارے میں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    جانے اس نے کیا دیکھا شہر کے منارے میں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY