جذب کچھ تتلیوں کے پر میں ہے

آلوک مشرا

جذب کچھ تتلیوں کے پر میں ہے

آلوک مشرا

MORE BY آلوک مشرا

    جذب کچھ تتلیوں کے پر میں ہے

    کیسی خوشبو سی اس کلر میں ہے

    آنے والا ہے کوئی صحرا کیا

    گرد ہی گرد رہ گزر میں ہے

    جب سے دیکھا ہے خواب میں اس کو

    دل مسلسل کسی سفر میں ہے

    چھو کے گاڑی بغل سے کیا گزری

    بے خیالی سی اک نظر میں ہے

    میں بھی بکھرا ہوا ہوں اپنوں میں

    وہ بھی تنہا سا اپنے گھر میں ہے

    رات تم یاد بھی نہیں آئے

    پھر اداسی سی کیوں سحر میں ہے

    اس کی خاموشی گونجتی ہوگی

    شور برپا جو دل کھنڈر میں ہے

    ہاتھ سر پر وہ شاخیں رکھتی ہیں

    کوئی اپنا سا اس شجر میں ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    آلوک مشرا

    آلوک مشرا

    RECITATIONS

    آلوک مشرا

    آلوک مشرا

    آلوک مشرا

    جذب کچھ تتلیوں کے پر میں ہے آلوک مشرا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY