جو بھی من جملۂ اشجار نہیں ہو سکتا

عباس تابش

جو بھی من جملۂ اشجار نہیں ہو سکتا

عباس تابش

MORE BYعباس تابش

    جو بھی من جملۂ اشجار نہیں ہو سکتا

    کچھ بھی ہو جائے مرا یار نہیں ہو سکتا

    اک محبت تو کئی بار بھی ہو سکتی ہے

    ایک ہی شخص کئی بار نہیں ہو سکتا

    جس سے پوچھیں ترے بارے میں یہی کہتا ہے

    خوب صورت ہے وفادار نہیں ہو سکتا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے