کبھی سنتے ہیں عقل و ہوش کی اور کم بھی پیتے ہیں

نشور واحدی

کبھی سنتے ہیں عقل و ہوش کی اور کم بھی پیتے ہیں

نشور واحدی

MORE BYنشور واحدی

    کبھی سنتے ہیں عقل و ہوش کی اور کم بھی پیتے ہیں

    کبھی ساقی کی نظریں دیکھ کر پیہم بھی پیتے ہیں

    کہاں تم دوستوں کے سامنے بھی پی نہیں سکتے

    کہاں ہم رو بہ روئے ناصح برہم بھی پیتے ہیں

    خزاں کی فصل ہو روزے کے ایام مبارک ہوں

    طبیعت لہر پر آئی تو بے موسم بھی پیتے ہیں

    طواف کعبہ بے کیفیت مے ہو نہیں سکتا

    ملا لیتے ہیں تھوڑی سی اگر زمزم بھی پیتے ہیں

    کہاں کی توبہ کیسا اتقا عہد جوانی میں

    اگر سمجھو تو آؤ تم بھی چکھو ہم بھی پیتے ہیں

    نشورؔ آلودۂ عصیاں سہی پر کون باقی ہے

    یہ باتیں راز کی ہیں قبلۂ عالم بھی پیتے ہیں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نشور واحدی

    نشور واحدی

    مآخذ:

    • کتاب : Sawad-e-manzil (Pg. 90)
    • Author : Nushoor Wahedi
    • مطبع : Maktaba Jamia Ltd, Delhi (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY