کہاں کسی پہ یہ احسان کرنے والا ہوں

آفتاب حسین

کہاں کسی پہ یہ احسان کرنے والا ہوں

آفتاب حسین

MORE BYآفتاب حسین

    کہاں کسی پہ یہ احسان کرنے والا ہوں

    میں اپنے آپ کو حیران کرنے والا ہوں

    عجیب رنگ کی خوشبو ہے میرے کیسے میں

    میں شہر بھر کو پریشان کرنے والا ہوں

    کھلا رہے گا کسی یاد کے جزیرے پر

    یہ باغ میں جسے ویران کرنے والا ہوں

    دعائیں مانگتا ہوں سب کی زندگی کے لیے

    اور اپنی موت کا سامان کرنے والا ہوں

    کچھ اور طرح کی مشکل میں ڈالنے کے لیے

    میں اپنی زندگی آسان کرنے والا ہوں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    کہاں کسی پہ یہ احسان کرنے والا ہوں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY