کمی رکھتا ہوں اپنے کام کی تکمیل میں

آفتاب حسین

کمی رکھتا ہوں اپنے کام کی تکمیل میں

آفتاب حسین

MORE BYآفتاب حسین

    کمی رکھتا ہوں اپنے کام کی تکمیل میں

    مبادا آپ کھو جاؤں کہیں تمثیل میں

    بہت شدت رہی پہلے کنار چشم تک

    امڈ آیا ہے اب وہ سیل رود نیل میں

    مکان جاں لرزتا ہے ہوائے ہجر سے

    چراغ یاد کو رکھیں گے کس قندیل میں

    یہ گھڑیاں آہ پہ مجھ سے گریزاں ہیں اگر

    تو پھر میں کیوں رہوں گا وقت کی تحویل میں

    عذاب برق و باراں تھا اندھیری رات تھی

    رواں تھیں کشتیاں کس شان سے اس جھیل میں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    کمی رکھتا ہوں اپنے کام کی تکمیل میں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY