کس نے غم کے جال بکھیرے

صوفی تبسم

کس نے غم کے جال بکھیرے

صوفی تبسم

MORE BYصوفی تبسم

    کس نے غم کے جال بکھیرے

    صبح اندھیرے شام سویرے

    اس دنیا میں کام نہ آئے

    آنسو تیرے آنسو میرے

    رات کی کیفیت یاد آئی

    شام ہوئی ہے صبح سویرے

    حسن کا دامن پھر بھی خالی

    عشق نے لاکھوں اشک بکھیرے

    مجھ کو دنیا سے کیا مطلب

    دل بھی میرا تم بھی میرے

    رنگیں رنگیں عشق کی راہیں

    منزل منزل حسن کے ڈیرے

    آج تبسمؔ سب کے لب پر

    افسانے ہیں میرے تیرے

    مآخذ:

    • کتاب : (Sau Baar Chaman Mahka)Kulliyat-e- Sufi Tabassum (Pg. 159)
    • Author : Sufi Ghulam Mustafa Tabassum
    • مطبع : Alhamd Publications, Lahore (2008)
    • اشاعت : 2008

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY