کسی کا قہر کسی کی دعا ملے تو سہی

عبد الحمید

کسی کا قہر کسی کی دعا ملے تو سہی

عبد الحمید

MORE BYعبد الحمید

    کسی کا قہر کسی کی دعا ملے تو سہی

    سہی وہ دشمن جاں آشنا ملے تو سہی

    ابھی تو لال ہری بتیوں کو دیکھتے ہیں

    ملے کسی کی خبر سلسلہ ملے تو سہی

    یہ قید ہے تو رہائی بھی اب ضروری ہے

    کسی بھی سمت کوئی راستہ ملے تو سہی

    یہ شام سرد میں ہر سو الاؤ جلتے ہیں

    سیہ خموشی میں کوئی صدا ملے تو سہی

    قبائے جسم کہ ہے تار تار نذر کریں

    کبھی کہیں وہی پاگل ہوا ملے تو سہی

    RECITATIONS

    عبد الحمید

    عبد الحمید

    عبد الحمید

    کسی کا قہر کسی کی دعا ملے تو سہی عبد الحمید

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY