کیا روپ دوستی کا کیا رنگ دشمنی کا

مجید امجد

کیا روپ دوستی کا کیا رنگ دشمنی کا

مجید امجد

MORE BYمجید امجد

    کیا روپ دوستی کا کیا رنگ دشمنی کا

    کوئی نہیں جہاں میں کوئی نہیں کسی کا

    اک تنکا آشیانہ اک راگنی اثاثہ

    اک موسم بہاراں مہمان دو گھڑی کا

    آخر کوئی کنارا اس سیل بے کراں کا

    آخر کوئی مداوا اس درد زندگی کا

    میری سیاہ شب نے اک عمر آرزو کی

    لرزے کبھی افق پر تاگا سا روشنی کا

    شاید ادھر سے گزرے پھر بھی ترا سفینہ

    بیٹھا ہوا ہوں ساحل پر نے بہ لب کبھی کا

    اس التفات پر ہوں لاکھ التفات قرباں

    مجھ سے کبھی نہ پھیرا رخ تو نے بے رخی کا

    اب میری زندگی میں آنسو ہیں اور نہ آہیں

    لیکن یہ ایک میٹھا میٹھا سا روگ جی کا

    او مسکراتے تارو او کھلکھلاتے پھولو

    کوئی علاج میری آشفتہ خاطری کا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY