لمحہ در لمحہ تری راہ تکا کرتی ہے

عباس قمر

لمحہ در لمحہ تری راہ تکا کرتی ہے

عباس قمر

MORE BYعباس قمر

    لمحہ در لمحہ تری راہ تکا کرتی ہے

    ایک کھڑکی تری آمد کی دعا کرتی ہے

    سلوٹیں چیختی رہتی ہیں مرے بستر کی

    کروٹوں میں ہی مری رات کٹا کرتی ہے

    وقت تھم جاتا ہے اب رات گزرتی ہی نہیں

    جانے دیوار گھڑی رات میں کیا کرتی ہے

    چاند کھڑکی میں جو آتا تھا نہیں آتا اب

    تیرگی چاروں طرف رقص کیا کرتی ہے

    میرے کمرے میں اداسی ہے قیامت کی مگر

    ایک تصویر پرانی سی ہنسا کرتی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY