لطف زندگانی کا شوق آرزو میں ہے

جامی ردولوی

لطف زندگانی کا شوق آرزو میں ہے

جامی ردولوی

MORE BYجامی ردولوی

    لطف زندگانی کا شوق آرزو میں ہے

    جذبہ و جنوں میں ہے سعی و جستجو میں ہے

    جو سکون خاطر ہے اس کے عیب میں دل کش

    چاشنی ہے لکنت ہے سحر گفتگو میں ہے

    اس کے قرب کی لذت مجھ سے کیا بیاں ہوگی

    بے پناہ کیفیت صرف آرزو میں ہے

    زہر زندگانی کا پی کے عقل آئی ہے

    داروئے غم ہستی تلخئ سبو میں ہے

    بھیڑ میں زمانے کی ہم سدا اکیلے تھے

    وہ بھی دور ہے کتنا جو رگ گلو میں ہے

    بات جامیؔ صاحب کی تلخ بھی ہے شیریں بھی

    درد ہلکا ہلکا سا طرز گفتگو میں ہے

    مآخذ :
    • کتاب : Shora-e-London (Pg. 182)
    • Author : Jauhar Zahiri
    • مطبع : Books From India (U.K) Ltd. 45, Museum Street,Londan W.C-1 (1985)
    • اشاعت : 1985

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY