مسیح وقت سہی ہم کو اس سے کیا لینا

فارغ بخاری

مسیح وقت سہی ہم کو اس سے کیا لینا

فارغ بخاری

MORE BYفارغ بخاری

    مسیح وقت سہی ہم کو اس سے کیا لینا

    کبھی ملے بھی تو کچھ درد دل بڑھا لینا

    ہزار ترک وفا کا خیال ہو لیکن

    جو روبرو ہوں تو بڑھ کر گلے لگا لینا

    کسی کو چوٹ لگے اپنے دل کو خوں کرنا

    زمانے بھر کے غموں کو گلے لگا لینا

    خمار ٹوٹے تو کیسے کہ ہم نے سیکھ لیا

    جو تو نہ ہو تو تری یاد سے نشہ لینا

    سفینہ ڈوب بھی جائے تو غم نہیں فارغؔ

    نہ بھول کر کبھی احسان ناخدا لینا

    مأخذ :
    • کتاب : Junoon (Pg. 74)
    • Author : Naseem Muqri
    • مطبع : Naseem Muqri (1990)
    • اشاعت : 1990

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY