مرے سلوک کی قیمت یہیں ادا کر دے

خالد غنی

مرے سلوک کی قیمت یہیں ادا کر دے

خالد غنی

MORE BYخالد غنی

    مرے سلوک کی قیمت یہیں ادا کر دے

    مجھے گناہ کی لذت سے آشنا کر دے

    عبور کر نہ سکا بے حسی کی چٹانیں

    مرے ضمیر کو مردانگی عطا کر دے

    میں مصلحت کے تقاضوں کو کر سکوں پورا

    مری انا کو مرے پیٹ سے جدا کر دے

    تمام خواہشیں میری لباس نوچ چکیں

    تو اب لہو کا مزیدار ذائقہ کر دے

    میں جذب و بست کی منزل میں قید ہوں کب سے

    مرے خدا تو فراری کا راستہ کر دے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY