نہ پیمانے کھنکتے ہیں نہ دور جام چلتا ہے

شکیل بدایونی

نہ پیمانے کھنکتے ہیں نہ دور جام چلتا ہے

شکیل بدایونی

MORE BYشکیل بدایونی

    نہ پیمانے کھنکتے ہیں نہ دور جام چلتا ہے

    نئی دنیا کے رندوں میں خدا کا نام چلتا ہے

    غم عشق سے ہیں غم ہستی کے ہنگامے جدا لیکن

    وہاں بھی دن گزرتے ہیں یہاں بھی کام چلتا ہے

    چھپے ہیں لاکھ حق کے مرحلے گم نام ہونٹوں پر

    اسی کی بات چل جاتی ہے جس کا نام چلتا ہے

    جنون رہروی وقت کی رفتار سے پوچھو

    کوئی منزل نہیں لیکن یہ صبح و شام چلتا ہے

    شکیلؔ مست کو مستی میں جو کہنا ہے کہنے دو

    یہ مے خانہ ہے اے واعظ یہاں سب کام چلتا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY