ننگ نہیں مجھ کو تڑپنے سے سنبھل جانے کا

ولی عزلت

ننگ نہیں مجھ کو تڑپنے سے سنبھل جانے کا

ولی عزلت

MORE BYولی عزلت

    ننگ نہیں مجھ کو تڑپنے سے سنبھل جانے کا

    ڈر ہے اس خنجر مژگاں کے پھسل جانے کا

    نبض زنجیر کے ہلنے سے چھٹے ہے عاشق

    بو الہوس کہوے ہوا شوق نکل جانے کا

    گرچہ وہ رشک چمن مجھ سے ہے باغی لیکن

    آتش گل سے ہے خوف اس کے کمہل جانے کا

    تلخ لگتا ہے اسے شہر کی بستی کا سواد

    ذوق ہے جس کو بیاباں کے نکل جانے کا

    جوں صبا خانقہوں میں جو کبھو جاتا ہوں

    قصد ہے غنچہ عماموں کے کچل جانے کا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY