نیند آنکھوں سے اڑی پھول سے خوشبو کی طرح

عبید اللہ علیم

نیند آنکھوں سے اڑی پھول سے خوشبو کی طرح

عبید اللہ علیم

MORE BYعبید اللہ علیم

    نیند آنکھوں سے اڑی پھول سے خوشبو کی طرح

    جی بہل جائے گا شب سے ترے گیسو کی طرح

    دوستو جشن مناؤ کہ بہار آئی ہے

    پھول گرتے ہیں ہر اک شاخ سے آنسو کی طرح

    میری آشفتگیٔ شوق میں اک حسن بھی ہے

    تیرے عارض پہ مچلتے ہوئے گیسو کی طرح

    اب ترے ہجر میں لذت نہ ترے وصل میں لطف

    ان دنوں زیست ہے ٹھہرے ہوئے آنسو کی طرح

    زندگی کی یہی قیمت ہے کہ ارزاں ہو جاؤ

    نغمۂ درد لیے موجۂ خوشببو کی طرح

    کس کو معلوم نہیں کون تھا وہ شخص علیمؔ

    جس کی خاطر رہے آوارہ ہم آہو کی طرح

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    مآخذ
    • کتاب : Chand Chehra Sitara Aankhen (Pg. 97)

    موضوعات:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY