پھر یاد اسے کرنے کی فرصت نکل آئی

اشفاق حسین

پھر یاد اسے کرنے کی فرصت نکل آئی

اشفاق حسین

MORE BYاشفاق حسین

    پھر یاد اسے کرنے کی فرصت نکل آئی

    مت پوچھئے کس موڑ پہ قسمت نکل آئی

    کچھ ان دنوں دل اس کا دکھا ہے تو ہمیں بھی

    اس شخص سے ملنے کی سہولت نکل آئی

    آباد ہوئے جب سے ان آنکھوں کے کنارے

    دنیا جسے سمجھے تھے وہ جنت نکل آئی

    جو خواب کی دہلیز تلک بھی نہیں آیا

    آج اس سے ملاقات کی صورت نکل آئی

    اب آ کے گلے ملتا ہے پہلے تھا گریزاں

    کیا ہم سے اسے کوئی ضرورت نکل آئی

    اک شخص کی محبوب نگاہی کے سبب سے

    اشفاقؔ تمہاری بھی تو قامت نکل آئی

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق,

    نعمان شوق

    پھر یاد اسے کرنے کی فرصت نکل آئی نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY