راست اگر سرو سی قامت کرے

فائز دہلوی

راست اگر سرو سی قامت کرے

فائز دہلوی

MORE BYفائز دہلوی

    راست اگر سرو سی قامت کرے

    یار کی آنکھوں میں قیامت کرے

    پانی ہووے آرسی اس مکھ کو دیکھ

    زہرہ اسے کیا کہ اقامت کرے

    طور مری عقل و خرد سے ہے دور

    مجھ کو سبی خلق ملامت کرے

    چھب ہوئے جس شخص کو تجھ ماہ سی

    سرو قداں بیچ امامت کرے

    دہر میں فائزؔ سا نہیں ایک تن

    عشق کے قانون میں قیامت کرے

    مآخذ:

    • کتاب : Intekhab Kalam (Pg. 69)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY