صنم کوچہ ترا ہے اور میں ہوں

امام بخش ناسخ

صنم کوچہ ترا ہے اور میں ہوں

امام بخش ناسخ

MORE BYامام بخش ناسخ

    صنم کوچہ ترا ہے اور میں ہوں

    یہ زندان دغا ہے اور میں ہوں

    یہی کہتا ہے جلوہ میرے بت کا

    کہ اک ذات خدا ہے اور میں ہوں

    ادھر آنے میں ہے کس سے تجھے شرم

    فقط اک غم ترا ہے اور میں ہوں

    کرے جو ہر قدم پر ایک نالہ

    زمانے میں درا ہے اور میں ہوں

    تری دیوار سے آتی ہے آواز

    کہ اک بال ہما ہے اور میں ہوں

    نہ ہو کچھ آرزو مجھ کو خدایا

    یہی ہر دم دعا ہے اور میں ہوں

    کیا درباں نے سنگ آستانہ

    در دولت سرا ہے اور میں ہوں

    گیا وہ چھوڑ کر رستے میں مجھ کو

    اب اس کا نقش پا ہے اور میں ہوں

    زمانے کے ستم سے روز ناسخؔ

    نئی اک کربلا ہے اور میں ہوں

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    صنم کوچہ ترا ہے اور میں ہوں فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY