تری محفل میں سوز جاودانی لے کے آیا ہوں

صوفی تبسم

تری محفل میں سوز جاودانی لے کے آیا ہوں

صوفی تبسم

MORE BYصوفی تبسم

    تری محفل میں سوز جاودانی لے کے آیا ہوں

    محبت کی متاع غیر فانی لے کے آیا ہوں

    میں آیا ہوں فسون جذبۂ دل آزمانے کو

    نگاہ شوق کی جادو بیانی لے کے آیا ہوں

    میں آیا ہوں سنانے قصۂ غم سرد آہوں میں

    ڈھلکتے آنسوؤں کی بے زبانی لے کے آیا ہوں

    میں تحفہ لے کے آیا ہوں تمناؤں کے پھولوں کا

    لٹانے کو بہار زندگانی لے کے آیا ہوں

    بیاں جس کو کیا کرتی تھیں میری ناتواں نظریں

    وہی درد محبت کی کہانی لے کے آیا ہوں

    اگرچہ عالم فانی کی ہر اک چیز فانی ہے

    مگر میں ہوں کہ عشق جاودانی لے کے آیا ہوں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    صوفی تبسم

    صوفی تبسم

    مآخذ:

    • کتاب : sau-e-baar-e-chaman mahka (Pg. 88)
    • Author : Suufi tabassum
    • مطبع : Alhamd publication lek rod lahaur (2008)
    • اشاعت : 2008

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY