تجھ کو اغراض جہاں سے ماورا سمجھا تھا میں

عبدالرحمان بزمی

تجھ کو اغراض جہاں سے ماورا سمجھا تھا میں

عبدالرحمان بزمی

MORE BY عبدالرحمان بزمی

    تجھ کو اغراض جہاں سے ماورا سمجھا تھا میں

    پیکر اخلاص تصویر وفا سمجھا تھا میں

    جب لیا نام خدا کشتی کنارے لگ گئی

    جانے کس کس بو الہوس کو ناخدا سمجھا تھا میں

    تھا کسی ظالم کا اپنا مدعائے زندگی

    جس کو اپنی زندگی کا مدعا سمجھا تھا میں

    تھا کسی گم کردۂ منزل کا نقش بے ثبات

    جس کو میر کارواں کا نقش پا سمجھا تھا میں

    انتہائے یاس میں اب کیا کہوں؟ کس سے کہوں؟

    ابتدائے شوق میں کس کس کو کیا سمجھا تھا میں

    آ گیا جب آ گیا ان کو خیال التفات

    اپنے شوق دل کو بزمیؔ نارسا سمجھا تھا میں

    مآخذ:

    • کتاب : Shora-e-London (Pg. 47)
    • Author : Jauhar Zahiri
    • مطبع : Books From India (U.K) Ltd. 45, Museum Street,Londan W.C-1 (1985)
    • اشاعت : 1985
    • کتاب : Shora-e-London (Pg. 47)
    • Author : Jauhar Zahiri
    • مطبع : Books From India (U.K) Ltd. 45, Museum Street,Londan W.C-1 (1985)
    • اشاعت : 1985

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY