تجھ میں کب حسن بہار گل کی رعنائی نہ تھی

جوہر زاہری

تجھ میں کب حسن بہار گل کی رعنائی نہ تھی

جوہر زاہری

MORE BY جوہر زاہری

    تجھ میں کب حسن بہار گل کی رعنائی نہ تھی

    کب ترے جلووں کی اک دنیا تماشائی نہ تھی

    زندگی بھر آرزو کا خون ہی ہوتا رہا

    لب پہ لیکن ایک دن بھی آہ تک آئی نہ تھی

    عشق ہے اک آتش دل سوز میں جلنے کا نام

    ہم کو تو روز ازل یہ بات سمجھائی نہ تھی

    ہم رہے ہیں منزلوں ہی منزلوں میں عمر بھر

    جیسے قسمت میں کسی پہلو شکیبائی نہ تھی

    اک چمن کیا دو جہاں کی آفتوں سے دور تھا

    غنچۂ نورس کے لب تک جب ہنسی آئی نہ تھی

    کیا کہوں جوہرؔ جو میرے جان و دل پر بن گئی

    موت کا پیغام تھا اک شام تنہائی نہ تھی

    مآخذ:

    • کتاب : Shora-e-London (Pg. 67)
    • Author : Jauhar Zahiri
    • مطبع : Books From India (U.K) Ltd. 45, Museum Street, Londan W.C-1 (1985)
    • اشاعت : 1985

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY