تم اور فریب کھاؤ بیان رقیب سے

آغا حشر کاشمیری

تم اور فریب کھاؤ بیان رقیب سے

آغا حشر کاشمیری

MORE BYآغا حشر کاشمیری

    تم اور فریب کھاؤ بیان رقیب سے

    تم سے تو کم گلہ ہے زیادہ نصیب سے

    گویا تمہاری یاد ہی میرا علاج ہے

    ہوتا ہے پہروں ذکر تمہارا طبیب سے

    برباد دل کا آخری سرمایہ تھی امید

    وہ بھی تو تم نے چھین لیا مجھ غریب سے

    دھندلا چلی نگاہ دم واپسیں ہے اب

    آ پاس آ کے دیکھ لوں تجھ کو قریب سے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    مختار بیگم

    مختار بیگم

    مآخذ:

    • کتاب : Junoon (Pg. 98)
    • Author : Naseem Muqri
    • مطبع : Naseem Muqri (1990)
    • اشاعت : 1990

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY