وہ اور محبت سے مجھے دیکھ رہا ہو

زیب غوری

وہ اور محبت سے مجھے دیکھ رہا ہو

زیب غوری

MORE BYزیب غوری

    وہ اور محبت سے مجھے دیکھ رہا ہو

    کیا دل کا بھروسا مجھے دھوکا ہی ہوا ہو

    ہوگا کوئی اس دل سا بھی دیوانہ کہ جس نے

    خود آگ لگائی ہو بجھانے بھی چلا ہو

    اک نیند کا جھونکا شب غم آ تو گیا تھا

    اب وہ ترے دامن کی ہوا ہو کہ صبا ہو

    دل ہے کہ تری یاد سے خالی نہیں رہتا

    شاید ہی کبھی میں نے تجھے یاد کیا ہو

    زیبؔ آج ہے بے کیف سا کیوں چاند نہ جانے

    جیسے کوئی ٹوٹا ہوا پیمانہ پڑا ہو

    RECITATIONS

    جاوید نسیم

    جاوید نسیم

    جاوید نسیم

    وہ اور محبت سے مجھے دیکھ رہا ہو جاوید نسیم

    مأخذ :
    • کتاب : zartaab (Pg. 236)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY