وہ کون ہے جو مجھ پہ تأسف نہیں کرتا

شیخ ابراہیم ذوقؔ

وہ کون ہے جو مجھ پہ تأسف نہیں کرتا

شیخ ابراہیم ذوقؔ

MORE BYشیخ ابراہیم ذوقؔ

    وہ کون ہے جو مجھ پہ تأسف نہیں کرتا

    پر میرا جگر دیکھ کہ میں اف نہیں کرتا

    کیا قہر ہے وقفہ ہے ابھی آنے میں اس کے

    اور دم مرا جانے میں توقف نہیں کرتا

    کچھ اور گماں دل میں نہ گزرے ترے کافر

    دم اس لیے میں سورۂ یوسف نہیں کرتا

    پڑھتا نہیں خط غیر مرا واں کسی عنواں

    جب تک کہ وہ مضموں میں تصرف نہیں کرتا

    دل فقر کی دولت سے مرا اتنا غنی ہے

    دنیا کے زر و مال پہ میں تف نہیں کرتا

    تا صاف کرے دل نہ مئے صاف سے صوفی

    کچھ سود و صفا علم تصوف نہیں کرتا

    اے ذوقؔ تکلف میں ہے تکلیف سراسر

    آرام میں ہے وہ جو تکلف نہیں کرتا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY