یاد اسے بھی ایک ادھورا افسانہ تو ہوگا

جاوید اختر

یاد اسے بھی ایک ادھورا افسانہ تو ہوگا

جاوید اختر

MORE BY جاوید اختر

    یاد اسے بھی ایک ادھورا افسانہ تو ہوگا

    کل رستے میں اس نے ہم کو پہچانا تو ہوگا

    ڈر ہم کو بھی لگتا ہے رستے کے سناٹے سے

    لیکن ایک سفر پر اے دل اب جانا تو ہوگا

    کچھ باتوں کے مطلب ہیں اور کچھ مطلب کی باتیں

    جو یہ فرق سمجھ لے گا وہ دیوانہ تو ہوگا

    دل کی باتیں نہیں ہے تو دلچسپ ہی کچھ باتیں ہوں

    زندہ رہنا ہے تو دل کو بہلانا تو ہوگا

    جیت کے بھی وہ شرمندہ ہے ہار کے بھی ہم نازاں

    کم سے کم وہ دل ہی دل میں یہ مانا تو ہوگا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY