یہ حوصلہ تجھے مہتاب جاں ہوا کیسے

کشور ناہید

یہ حوصلہ تجھے مہتاب جاں ہوا کیسے

کشور ناہید

MORE BYکشور ناہید

    یہ حوصلہ تجھے مہتاب جاں ہوا کیسے

    کہ خود کو سائے سے منہا کیا بتا کیسے

    نظر تو کیا کہ یہ مینائے دل بھی خالی ہے

    لگے گا شہر میں بازار خوں بہا کیسے

    مجھے خبر ہے کہ موسم نہیں یہ خواہش کا

    مرے لبوں پہ یہ ٹھہرا ہے ذائقہ کیسے

    خدائی نوحہ کناں تھی کہ آج منبر پہ

    یہ تجھ کو آیا نظر کیا مرے سوا کیسے

    تعلقات کے تعویذ بھی گلے میں نہیں

    ملال دیکھنے آیا ہے راستہ کیسے

    قفس میں میری پناہوں کو دیکھ حیراں تھا

    کہ میرے دل میں تھا مقتل کا زائچہ کیسے

    ہوا سے جیسے چراغوں کی لو بھڑکتی ہے

    بہت دنوں میں تجھے دیکھ کے ہنسا کیسے

    RECITATIONS

    کشور ناہید

    کشور ناہید

    کشور ناہید

    یہ حوصلہ تجھے مہتاب جاں ہوا کیسے کشور ناہید

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY