یہ کیا کہ اک جہاں کو کرو وقف اضطراب (ردیف .. و)

صوفی تبسم

یہ کیا کہ اک جہاں کو کرو وقف اضطراب (ردیف .. و)

صوفی تبسم

MORE BYصوفی تبسم

    یہ کیا کہ اک جہاں کو کرو وقف اضطراب

    یہ کیا کہ ایک دل کو شکیبانہ کر سکو

    ایسا نہ ہو یہ درد بنے درد لا دوا

    ایسا نہ ہو کہ تم بھی مداوا نہ کر سکو

    شاید تمہیں بھی چین نہ آئے مرے بغیر

    شاید یہ بات تم بھی گوارا نہ کر سکو

    کیا جانے پھر ستم بھی میسر ہو یا نہ ہو

    کیا جانے یہ کرم بھی کرو یا نہ کر سکو

    اللہ کرے جہاں کو مری یاد بھول جائے

    اللہ کرے کہ تم کبھی ایسا نہ کر سکو

    میرے سوا کسی کی نہ ہو تم کو جستجو

    میرے سوا کسی کی تمنا نہ کر سکو

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    سیان چودھری

    سیان چودھری

    سیان چودھری

    سیان چودھری

    مآخذ:

    • کتاب : Beesveen Sadi Ki Behtareen Ishqiya Ghazlen (Pg. 140)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY