fan-e-shairi

अरस्तू

अंजुमन तरक़्क़ी उर्दू (हिन्द), देहली
1989 | अन्य

पुस्तक: परिचय

परिचय

دنیامیں بہت ہی کم ایسی کتابیں ہیں جنہیں عالمی سطح پر مقبولیت حاصل ہوئی ہو اور کبھی اس کی مقبولیت میں کمی نہیں آئی ہو ، انہی میں سے ایک ارسطو کی ’بوطیقا‘ یا ’فن شاعری ‘ ہے۔یہ کتاب دنیابھر میں نہ سہی البتہ یوروپ میں ادبی تنقید پر پہلی کتاب ہے ۔ شاید ہی کسی کتاب نے ادبی دنیا پر یا اردو ادب پر اتنااثر ڈالا ہوگا جتنا اس کتاب کا ہوا ۔ادبی تنقید میں ارسطو کی یہ کتاب صحیفہ آسمانی کے طور پر سمجھی جاتی ہے ۔جتنا آسمانی کتب کے تفاسیر اور شروحات لکھے گئے اسی طرح اس کتاب کے ایک ایک جملے کی تشریحات پر بے شمار مقالات و کتب لکھے گئے۔ اس کتاب کے پانچ حصے ہیں۔پہلا حصہ ’’ شاعری پر ایک عام اور بالموازنہ نظر۔’’شاعری کی قسمیں‘‘ دوسرے حصے میں ’’ ٹریجڈی ‘‘ ،تیسرے حصہ میں’’ رزمیہ شاعری‘‘ چوتھے حصہ میں ’’ نقادوں کے اعتراض اور ا س کے جواب دینے کے اصول ‘‘اور پانچویں حصے میں ’’ ٹریجڈی رزمیہ شاعری سے افضل ہے ‘‘ کا بیان ہے اس کے بعدضمیمہ ہے ۔ ان مشمولات سے ہی اندازہ ہوگیا ہوگا کہ کتاب کتنی جامع اور مانع ہے ۔

.....और पढ़िए

लेखक की अन्य पुस्तकें

पूरा देखिए

लोकप्रिय और ट्रेंडिंग

पूरा देखिए

पुस्तकों की तलाश निम्नलिखित के अनुसार

पुस्तकें विषयानुसार

शायरी की पुस्तकें

पत्रिकाएँ

पुस्तक सूची

लेखकों की सूची

विश्वविद्यालय उर्दू पाठ्यक्रम