उर्दू नॉवेल आग़ाज़-ओ-इर्तेक़ा

अज़ीमुश्शान सिद्दीक़ी

एजुकेशनल पब्लिशिंग हाउस, दिल्ली
2008 | अन्य

पुस्तक: परिचय

परिचय

1857 کے بعد زندگی میں بہت ساری تبدیلیاں آتی ہیں، ہر شعبہ زندگی نئے سفر کو تیار ہوتا ہے۔ ادب بھی بدلتا ہے ادب کے اصناف کے ساتھ اقدار بھی بدلتے ہیں ۔قدیم اصناف ادب ماضی کی جانب چلے جاتے ہیں ان کی تخلیق آہستہ آہستہ ختم ہوجاتی ہے ۔ اسی وجہ سے 1857 کے بعد کوئی قابل قدر داستان نہیں ملتی ہے بلکہ فسانہ آزاد داستان اور ناول کے بیچ کی کڑی کے ساتھ سامنے آتا ہے اور ناول کے اجزا کو اپنے ساتھ لاتا ہے، اس کے کچھ ہی دنوں بعد مولوی نذیر احمد ، مولانا عبد الحلیم شرروغیرہ کے ناول آناشروع ہوجاتے ہیں اور ناول کے تشکیلی دور کو مرزا ہادی رسوا تکمیل تک پہنچاتے ہیں ۔ یہ سفر اب تک جاری ہے اور دیگر عالمی زبانوں کے ساتھ اردو میں بھی عمدہ ناول تخلیق پارہے ہیں ۔ اسی ناول کے سفر کو عظیم الشان صدیق نے اپنی اس کتاب میں پیش کیا ہے۔ اس میں سات ابواب ہیں۔ پہلا باب ناول کے فن پر ، دوسرا باب ناول سے پہلے کی کہانی پر ، تیسرا باب ناول کے شعور کا آغاز اور پیش رو ادب کی تفصیل پر ، چوتھا باب اردوناول سے شروع ہوتا ہے اور کتاب ارد و ناول کے تراجم پر ختم ہوجاتی ہے ۔اس کتاب میں صرف 1857 سے 1914 تک کا ذکر ہے ۔ ایک طرح سے اس میں اردو ناول کے آغاز کی مکمل کہانی مل جاتی ہے ۔

.....और पढ़िए

लेखक की अन्य पुस्तकें

पूरा देखिए

लोकप्रिय और ट्रेंडिंग

पूरा देखिए

पुस्तकों की तलाश निम्नलिखित के अनुसार

पुस्तकें विषयानुसार

शायरी की पुस्तकें

पत्रिकाएँ

पुस्तक सूची

लेखकों की सूची

विश्वविद्यालय उर्दू पाठ्यक्रम