पुस्तक: परिचय

دراصل یہ کتاب مصنف کے لکھے گئے مضامین اور خطوط کا مجموعہ ہے ۔ آخر کتاب میں ان کی کچھ مختصر نظمیں بھی شامل کی گئی ہیں۔ بجنوری "دیوان غالب " کے مرتب ہیں۔ ان کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ غالب کو نفسیاتی اسلوب تنقید کی روشنی میں سب سے پہلے انہوں نے ہی پیش کیا ۔اس سے پہلے جو شرحیں طبع طبائی یا دوسرے لوگوں کی شائع ہوئیں ان کی حیثیت تشریحی تھی ۔ مرحوم بجنوری کی دقت نظر کا کمال ہے کہ انہوں نے غالب کے اس پہلو کو سب سے پہلے پیش کیا۔ اس کتاب میں کل چھ ابواب ہیں ۔ پہلے باب میں گیتانجلی کے اس وقت کا ذکر ہے جب گیتانجلی ( بہارنغمہ ) شائع ہوئی تھی تو ہر طرف اسی کا چرچا تھا۔ یہ بھی دکان پر خریداری کے لئے گئے ۔ وہاں کیا منظر دیکھنے کو ملا ،اس منظر کو دلچسپ انداز میں لکھا گیا ہے۔ بعد کے ابواب میں " وضع اصطلاحات علمیہ ، سیر لکھنؤ ، داشتہ آید بکار ، مکاتیب اور منظومات " شامل کیے گئے ہیں۔ کتاب میں ادب اور تاریخ دونوں کی لذت ملتی ہے۔ ابتدائی حصے میں بجنوری کی بلیک وہائٹ تصویر میں ان کی مسکراہٹ معنی خیز ہے۔

.....और पढ़िए

लेखक की अन्य पुस्तकें

लेखक की अन्य पुस्तकें यहाँ पढ़ें।

पूरा देखिए

पाठकों की पसंद

यदि आप अन्य पाठकों की पसंद में रुचि रखते हैं, तो रेख़्ता पाठकों की पसंदीदा उर्दू पुस्तकों की इस सूची को देखें।

पूरा देखिए

लोकप्रिय और ट्रेंडिंग

सबसे लोकप्रिय और ट्रेंडिंग उर्दू पुस्तकों का पता लगाएँ।

पूरा देखिए

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
बोलिए