مصنف : مختار صدیقی

ناشر : نذیر احمد چودھری

سن اشاعت : 1955

زبان : Urdu

موضوعات : شاعری

ذیلی زمرہ جات : مجموعہ

صفحات : 123

معاون : جامعہ ہمدردہلی

منزل شب

کتاب: تعارف

اس کتاب کی نظمیں تشریحاتی اور تاثراتی ہیں۔ اس مجموعہ میں چار حصے ہیں۔ پہلا حصہ " شب ناب" کے عنوان سے ہے ۔اس کی شروعات جس نظم سے کی گئی ہے اس کا عنوان " رات کی بات " ہے۔ اس میں مختلف عناوین کی نظمیں اور کچھ غزلیں بھی ہیں۔ دوسرا حصہ " سدا رنگ ہے۔ اس میں کلاسیکی موسیقی کے راگوں سے متعلق منظومات ہیں ۔ تیسرا حصہ " بوئے رفتہ" غزلوں پر مشتمل ہے۔ آخری حصہ " کیا خبر اس مقام سے گزرے ہیں کتنے کارواں" کے عنوان سے ہے اوراس میں مختلف صنف کے گیت ہیں۔ شعر کے متعلق کہا جاتا ہے کہ شاعر کو اپنے دل کے کسی پُر اسرار کرب کو آسودہ کرنے کے لئے لکھنا پڑتا ہے۔اس مجموعے میں ایسا ہی کچھ محسوس ہوتا ہے اور شاعر کے غم جاناں اور غم دوراں کا عکس یہاں نظر آتا ہے۔

.....مزید پڑھئے

مصنف: تعارف

مختار صدیقی، یکم مارچ ١٩١٧ء کو سیالکوٹ میں پیدا ہوئے * اور انہوں نے تعلیمی زندگی کے مدارج گوجرانوالہ اور لاہور میں طے کیے‘ وہ سیماب اکبر آبادی کے شاگرد تھے اور شاعر اور مترجم ہونے کے ساتھ ساتھ ایک نہایت عمدہ براڈ کاسٹرتھے۔ قیام پاکستان کے بعد وہ ریڈیو پاکستان سے وابستہ ہوئے اور پھر پاکستان ٹیلی ویژن کے قیام کے بعد ٹیلی ویژن میں بطور اسکرپٹ ایڈیٹر منسلک ہوئے۔
مختار صدیقی کی شاعری کے مجموعے منزل شب‘ سہ حرفی اور آثار کے نام سے شائع ہوئے۔ انہوں نے چینی مفکر ڈاکٹر لن یو تانگ کی دو کتابوں کے ترجمے جینے کی اہمیت اور جینے کا قرینہ کے نام سے کیے جو بہت مقبول ہوئے - 
١٨ ستمبر ١٩٧٢ء کو اردو کے نامور شاعر‘ ادیب‘ نقاد اور براڈ کاسٹر جناب مختار صدّیقی وفات پا گئے اور لاہور میں اچھرہ کے قبرستان میں آسودہِ خاک ہیں۔

.....مزید پڑھئے

مصنف کی مزید کتابیں

مصنف کی دیگر کتابیں یہاں پڑھئے۔

مزید

قارئین کی پسند

اگر آپ دوسرے قارئین کی دلچسپیوں میں تجسس رکھتے ہیں، تو ریختہ کے قارئین کی پسندیدہ

مزید

مقبول و معروف

مقبول و معروف اور مروج کتابیں یہاں تلاش کریں

مزید

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے