آج کی رات مرادوں کی برات آئی ہے

ساحر لدھیانوی

آج کی رات مرادوں کی برات آئی ہے

ساحر لدھیانوی

MORE BY ساحر لدھیانوی

    آج کی رات مرادوں کی برات آئی ہے

    آج کی رات نہیں شکوے شکایت کے لئے

    آج ہر لمحہ ہر اک پل ہے محبت کے لئے

    ریشمی سیج ہے مہکی ہوئی تنہائی ہے

    آج کی رات مرادوں کی برات آئی ہے

    ہر گنہ آج مقدس ہے فرشتوں کی طرح

    کانپتے ہاتھوں کو مل جانے دو رشتوں کی طرح

    آج ملنے میں نہ الجھن ہے نہ رسوائی ہے

    آج کی رات مرادوں کی برات آئی ہے

    اپنی زلفیں مرے شانے پہ بکھر جانے دو

    اس حسیں رات کو کچھ اور نکھر جانے دو

    صبح نے آج نہ آنے کی قسم کھائی ہے

    آج کی رات مرادوں کی برات آئی ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    محمد رفیع

    محمد رفیع

    مآخذ:

    • کتاب : Kulliyat-e-Sahir Ludhianvi (Pg. 298)
    • Author : SAHIR LUDHIANVI
    • مطبع : Farid Book Depot (Pvt.) Ltd

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY